Pakistan Columns

All Columns (Urdu and English)Of Pakistan You Could Easily Read Here/

Pakistan Main Kaesa Nazaam Ho

آج کل ہر طرف یہ بحث چل رہی ہے کہ پاکستان میں کیسا نظام ہونا چاہئے۔ میرے خیال میں پاکستان کی اسلامی حکومت کے اقتصادی وسماجی نظام کی چند نمایاں باتیں یہ ہونی چاہئیں۔
٭….حضور نے نہ خود زرعی زمین خریدی، نہ اسے بٹائی پر دیا اور نہ اس کو پسند فرمایا۔ زمین کا مالک وہی ہو جو اسے کاشت کرے ، زرعی زمین کو بٹائی پر یا کرائے پر دینا جرم قرار ہو۔
٭….ہر فرد کے لئے کام مہیا کرنا حکومت کی ذمہ داری تصور ہو۔ جس کے لئے امداد باہمی کی بنیاد پر چھوٹے چھوٹے صنعتی ادارے قائم کئے جائیں۔ جہاں ہر مند کارکن افراد کو کام مہیا کیا جائے۔
٭…. قرآن حکیم کے حکم (انسان اسی چیز کو بطور حق لے سکتا ہے جس کے لئے وہ کوشش کرے۔ ) کے مطابق پاکستان کا ہر باشندہ کام کرے اور لوگوں کو ان کی محنت کے مطابق اجر دیا جائے۔
٭…. سرکاری طور پر زکوٰة کا نظام قائم کیا جائے جس سے غریب بچوں، بوڑھوں، بیواﺅں اور معذوروں کو وظیفے دیئے جائیں۔
٭ ….گھریلو صنعتوں کی حوصلہ افزائی کے لئے بنکوں کو پابند کیا جائے کہ وہ اپنے اپنے علاقوں میں سستے داموں پر خام مال مہیا کریں اور ان کا تیار کردہ مال خرید کر مارکیٹ تک پہنچائیں۔
٭ ….کاروبار اور بنکنگ بلاسود ہو۔ پاکستان کے ہر خاندان کو خواہ وہ شہری ہو یا دیہاتی رہائش کے لئے مکان مہیا کیا جائے۔ اس فرض کے لئے بینکوں اور انشورنس کمپنیوں کے سرمائے کا ایک چوتھائی حصہ سے مکانات تعمیر کر کے عوام کو ماہانہ اقساط پر دیا جائے۔
٭ ….اللہ کے پیارے حبیب حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے کوئی ذاتی جائیداد ایسی نہیں بنائی جس کو کرائے پر دیا ہو۔ اس لئے مکانات صرف ذاتی رہائش کے لئے بنانے کی اجازت ہو۔
٭….میٹرک تک تعلیم مفت ہو۔ لڑکے لڑکیوں کے تعلیمی ادارے علیحدہ علیحدہ ہوں اور سٹاف بھی ویسا ہی ہو۔ سکولوں میں بیٹھنے، پینے کے پانی اور دیگر سہولتیں موجود ہوں۔ استاد کی تربیت ہو۔
٭…. ہر فردکو طبی امداد مفت مہیا ہو اور یہ حکومت کی ذمہ داری ہو۔ پرائیویٹ پریکٹس، عطائیت مکمل منع ہو۔ ہومیوپیتھک حکیم بھی حکومت کا سند یافتہ ہو۔
٭ ….ملاوٹ، جعلی ادویات، منشیات فروشی، منشیات کی ترغیب، بچوں، عورتوں کے اغوا، جنسی تشدد اور حرام مال بیچنے والوں کی جائیدادیں ضبط اور قید بامشقت ہو۔ عورتوں کے سمگلروں کو کڑی سزا ہو۔
٭….کارو کاری، بے جوڑ شادیاں اور عورتوں کی خریدوفروخت،جعلی عامل اور کالاجادو کرنے والے پکڑے جائیں اور جیلوں میں ڈالے جائیں۔
٭….انصاف کے لئے سپیشل کورٹس بنائی جائیں، ہر کیس کا فیصلہ ایک ہفتہ کے اندر اندر کیا جائے، کورٹ فیس اور اشٹام سسٹم ختم کیا جائے۔
٭ ….جعلی گواہوں کو پکڑ کر جیلوں میں عبرت ناک سزا دی جائے۔ انسانی سمگلنگ پر سزائے موت ہو۔
٭ ….عدالتوںاور اصلاحی کمیٹیوں میں داد رسی کے لئے سادہ کاغذ پر درخواست دینے (براہ راست یا بذریعہ ڈاک بھجوانے کا قانون بنایا جائے جیسا کہ چین میں ہے۔
٭ ….قرآن پاک میں ذخیرہ اندوزوں پر لعنت بھیجی گئی ہے اور حضور نے خود بھی مال نہیں جمع کیا۔ موجودہ صنعتی نظام جو کہ خالص سودی نظام ہے۔ دوسروں کی محنت کو روپے کے عوض لوٹتا ہے۔ اس لئے دولت ایک فرد یا ایک خاندان کے پاس جمع نہ ہونے پائے اورسب سے بڑھ کر یہ کہ اس سلسلے میں محض نعرہ بازی کے بجائے ٹھوس اقدامات کئے جائیں۔
٭ ….اقلیتوں کا تحفظ، ان کی درس گاہوں، عبادت گاہوں کا تحفظ یقینی بنایا جائے۔ ان کے قومی تہواروں پر سکیورٹی کا خاص انتظام کیا جائے۔
٭…. پاکستان کا ہر باشندہ حکومت کی طرف سے عائد کردہ ٹیکس ایمانداری سے ادا کرے۔
٭…. سب سے بڑھ کر ملک کا سربراہ مملکت، بیوروکریٹ، عدالت کا جج، ہر وزیر، مشیر، سفیر عہدہ سنبھالنے سے پہلے اپنے اثاثے ظاہر کر دے۔ امین اور ایماندار ہونے کا حلف دے۔
٭….ملک کے اخبارات کے بہترین رپورٹر، میڈیا کے بہترین اینکرز کو حکومت اعزازات سے نوازے اور یونیسکو کی طرح ہر سال کسی ایک بڑے ملک کی ہفتہ کی سیر کرائے اور وہاں کے اخبارات اوراینکر میڈیا کو دیکھے۔ اس طرح ایک تو حوصلہ افزائی ہو گی اور انفارمیشن میں تبدیلی آئے گی۔ یونیسکو سے مدد لی جا سکتی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Copied!